بھوک سےلڑ رہی ہے'غریب کی روٹی'

0

"سلا دیا ماں نے بھوکا بچے کو یہ کہہ کر،

پریاں آئیں گی خواب میں روٹیاں لے کر ... "

'غریب کی روٹی' تنظیم انہی بھوکے بچوں کی روٹیوں کا انتظام کر رہی ہے، جن کے خواب میں کچھ وقت پہلے تک پریاں روٹی لے کر آتی تھیں، لیکن یہ تنظیم صرف بھوکے بچوں کا ہی پیٹ نہیں بھر رہی، بلکہ  ہر عمر کی بھوک کا خیال رکھ رہی ہے، جو کبھی خالی پیٹ سونے پر مجبور ہوا کرتے تھے۔

" اتر پردیش، ہردوئی ضلع کے نوجوانوں نے انسانیت سے لبریز ایک  خیال کو حقیقی شکل دی ہے۔ ایک ایسی سوچ جو بھوک کے خلاف  کام کر رہی ہے، ایسی جگہ جہاں لڑتے ہوئے ہمارے سماج کا ایک خاص طبقہ اپنے پیٹ کو بھرنے کی جدوجہد سے دو چار رہا ہے۔"

بھارت کی ریاست اتر پردیش، کے دارالحکومت  لکھنؤ کے پاس ہی ایک ضلع ہے ہردوئی۔ ویسے تو ہردوئی اپنے آپ میں جانا-پہچانا ضلع ہے، لیکن ایک نوجوان تنظیم آج کل اس ضلع کی شناخت بنی ہوئی ہے اور یہ تنظیم ہے 'غریب کی روٹی'۔ یہ تنظیم بھوکے پیٹ کو بھرنے کے ساتھ ساتھ ان کے تن پر کپڑوں کا انتظام بھی کرتی ہے، اس کے ساتھ ساتھ ٹھنڈ میں ٹھٹھرتے جسم کو گرم سانچے سے پردہ ڈالنے کا بھی کام کرتی ہے۔

'غریب کی روٹی' تنظیم کچھ نوجوانوں نے مل کر شہر میں سماجی طور پر غریبوں کی مدد کرنے کے لئے بنائی  ہے۔ اس تنظیم کے کارکن ضلع کے گھروں سے روٹیاں اکٹھی کرتے ہیں۔ جس گھر سے جتنی روٹی مل جائے۔ ہر گھر آپ اپنی  حیثیت کے حساب سے روٹی کا عطیہ دیتا ہے۔ دن بھر میں جمع کی گئی روٹی شام ہوتے ہی غربت کی مار جھیل رہے بھوکے لوگوں میںتقسیم کر دی جاتی ہے۔ اکثر  لوگوں کا خیال ہوتا ہے کہ زیادہ تر لوگ نام اور شہرت کے لئے اس طرح کے سماجی کام کرتے ہیں، لیکن جب يوراسٹوري ٹیم نے 'غریب کی روٹی' تنظیم سے بات کی، تو یہاں کے والینٹيرس نے اپنا نام بتانے سے انکار کر دیا۔ انہوں نے کہا کہ ہم نام کے لئے اس تنظیم کو نہیں چلا رہے اور نہ ہی ہماری تنظیم کسی ایک شخص کی ہے۔ جو ہم سے ملے، وہ ہم سے جڑتا جاتا ہے۔ ہم ایک ٹیم کی طرح کام کرتے ہیں۔ یہاں کوئی 'میں' نہیں بلکہ ہم سب 'ہم' ہیں۔

'غریب کی روٹی' تنظیم کے نوجوان والینٹيرس ہفتے میں جمعرات اور اتوار کو گھروں سے دو روٹی کی طلب رکھتے ہیں، اور شام ہوتے ہی جائز خوراک لے کر شہر کے ضلع ہسپتال اور بس اسٹاپ جیسی جگہوں پر موجود ضرورت مندوں تک پہنچتے ہیں۔ خاص بات اس تنظیم کی یہ دیکھنے کو ملی کی تنظیم کا کوئی بھی شخص سماجی طور پر کوئی مالی مدد یا تعاون لینا پسند نہیں کرتا۔ تنظیم کے مطابق ان سے جڑنے والا شخص اگر حقیقی طور پر معاشرے کے تئیں اپنا جذبہ رکھتا ہے، تو وہ خود اپنی حیثیت کے مطابق غریب کی ضرورت کو پورا کرنے یا تعاون کرنے کے بارے میں بیدار ہو سکتا ہے۔

ساتھ ہی یہ تنظیم گزشتہ کچھ عرصے سے پرامن طریقے سے رات 11 بجے سے ٹھنڈ  سے كپكپانے والے غریبوں کے لئے گرم کمبل وغیرہ کا انتظام بھی کرتی ہے۔ یہ کمبل ان لوگوں میں تقسیم کئے جاتے ہیں، جو کھلے آسمان کے نیچے سونے پر مجبور ہیں۔ اپنے ارادوں کو اور مضبوطی دیتے ہوئے تنظیم مستقبل میں غریب اور بے بس لوگوں کو ستانے والوں کے خلاف بھی  جدہ جہد کرنے کا ارادا رکھتی ہے۔'

والینٹرس کے مطابق 'غریب کی روٹی' تنظیم ہفتے میں دو دن نہیں بلکہ آئندہ دنوں میں مکمل ہفتہ بھر کھانے انتظام و صرف کھانے انتظام تک محدود نہ رہ کر غریب کے حق کے لئے بھی آواز بلند کرے گی۔ معاشرے سے ان نوجوانوں کو مسلسل سماج کا تعاون بھی اور انسانیت کی سوچ کو  حوصلہ مل رہا ہے۔

- آکاش شکلا کی تحریر