غريبوں کی ترقی مرکوز ... 'اسٹارٹپ انڈیا' کی ساخت کا اعلان 16جنوری کو : مودی

0

غریبوں اور نوجوانوں کے لئے ' اسٹارٹپ انڈیا' کی منصوبہ بندی کو بڑا اور نئی طرز کا بنانے پر زوردیتے ہوئے وزیر اعظم نریندر مودی نے کہا کہ حکومت اگلے سال 16 جنوری کو ' اسٹارٹپ انڈیا، اسٹینڈپ انڈیا' کا سانچہ پیش کرے گی۔

ایئر پر 'دل کی بات' پروگرام میں اپنے خطاب میں وزیر اعظم نریندر مودی نے کہا، ''16 جنوری کو حکومت' ابتدائیہ انڈیا، اسٹینڈ انڈیا، 'کی پوری کام کی منصوبہ بندی پیش کرنے والی ہے۔ یہ کس طرح ہو گا؟ کیا ہو گا؟ کیوں ہوگا؟ اس کا ایک سانچہ آپ کے سامنے پیش کیا جائے گا۔ ''

انہوں نے کہا، '' اور اس پروگرام میں ملک بھر کے آئی آئی ٹی، آئی آئی ایم، تمام مرکزی یونیورسٹی، این آئی ٹی، جہاں جہاں بھی نوجوان نسل کے لوگ ہیں، ان سب کو براہ راست رابطہ کر کے اس پروگرام میں شامل کیا جائے گا ۔'' وزیر اعظم نے کہا کہ کے اسٹارٹپ کےبارے میں ہماری سوچ محدود ہے۔ جیسے ڈیجیٹل دنیا ہو یا آئی ٹی پیشہ ہو، اسٹارٹپ لوگوں کے لئے ہی ہے، ایسی بات نہیں ہے۔

مودی نے کہا، '' ہمیں تو اس میں ہندوستان کی ضروریات کے مطابق تبدیلی لانا ہے۔ غریب شخص کہیں اجرت کرتا ہے، اس کو جسمانی طور پر مزدوری کرنا پڑتا ہے، لیکن کوئی نوجوانون تخلیقی محنت سے ایک ایسی چیز بنا دے کہ غریب کو اجرت میں تھوڑی سہولت ہو جائے۔ میں اس کو بھی اسٹارٹپ مانتا ہوں۔''

وزیر اعظم نے کہا کہ کیا ہندوستان اسٹارٹپ کا دارالحکومت بن سکتا ہے؟ کیا ہمارے ریاستوں میں نوجوانوں کے لئے ایک بہترین موقع کے طور پر نئے نئے اسٹارٹپ ، مینوفیکچرنگ، سروس علاقے، زراعت وغیرہ میں نئے نئی جدت طرازی قابل اطلاق ہو سکتی ہے؟

مودی نے کہا کہ ہر چیز میں نیاپن، نیا طریقہ، نئی سوچ کی ضرورت ہے۔ دنیا جدت طرازی کے بغیر آگے نہیں بڑھ سکتی ہے۔ اسٹارٹپ انڈیا، اسٹینڈپ انڈیا نوجوان نسل کے لئے ایک بہت بڑا موقع لے ہے۔

مودی نے کہا، ''میں بینکوں سے کہوں گا کہ ایسے نوجوانوں کی مدد کریں، اور نوجوانوں سے بھی کہوں گا کہ ہمت سے آگے بڈھو۔ بازار ان کا استقبال کر رہا ہے۔ میرا سوال ہے کہ کیا ہماری نوجوان نسل کی ذہنی املاک چند شہروں میں محدود ہے ؟ یہ سوچ غلط ہے۔ ہندوستان کے ہر کونے میں نوجوانوں کے پاس صلاحیت ہے، بس ان کو موقع چاہیے۔ ''

وزیر اعظم نے کہا کہ یہ اسٹارٹپ انڈیا، اسٹینڈپ انڈیا کچھ شہروں تک محدود نہیں رہنا چاہیے، ہندوستان کے ہر کونے میں پھیلنا چاہیے۔ اور اس میں ریاستی حکومتوں سے بھی درخواست کر رہا ہوں کہ اس بات کو ہم آگے بڈھائے۔ 16 جنوری کو میں ضرور تم سب سے روبرو ہو کر تفصیل سے اس موضوع پر بات چیت کروں گا اور ہمیشہ آپ کے مشوروں کا استقبال رہے گا۔ ''

وزیر آعظم نے کہا کہ 15 اگست کو لال قلعہ سے میں نے اسٹارٹپ انڈیا، اسٹینڈپ انڈیا کے سلسلے میں ایک بنیادی بات چیت کی تھی ۔ اس کے بعد حکومت کے تمام محکموں میں یہ بات چل پڑی ہے۔