حیدرآبادی نوجوان روہت کھنڈیلوال نے جیتا مسٹر ورلڈ کا خطاب، ٹائٹل جیتنے والے ایشیا کے پہلے نوجوان

0

حیدرآباد کے نوجوان ماڈل روہت کھنڈیلوال نے برطانیہ میں منعقدہ مقابلہ میں مسٹر ورلڈ کا خطاب اپنے نام کر لیا ہے۔ اس طرح یہ خطاب جیتنے والے وہ ہندوستان کے ہی نہیں، بلکہ ایشیا کے پہلے نوجوان بن گئے ہیں۔ اس مقابلہ میں مختلف ممالک کے 47 امیدواروں نے حصہ لیا تھا اور فاتح کو 50000 ڈالر کے انعال کا اعلان کیا گیا ہے۔ مقابلہ گرینڈ فائنل 19 کی شام برطانیہ کے ساوتھ پورٹ تھیٹر اینڈ كنونشن تھیٹر میں منعقد کیا گیا۔

کل رات یہ ایوارڈ جیتنے کے بعد روہت نے کہا، 'مجھے یقین نہیں ہو پا رہا ہے کہ میں نے مسٹر ورلڈ کا ٹائٹل جیت لیا ہے۔ پہلے ہندوستانی کے طور پر یہ خطاب جیتنے کی وجہ سے مجھے بین الاقوامی شناخت ملی ہے اور فخر اور خوشی کا احساس ہو رہا ہے۔' انہوں نے مس انڈیا ادارے کا اظہار تشکر کیا، جس کی وجہ سے انہیں یہ موقع ملا ہے۔

مس ورلڈ 2014 نسلس پیڈرسین نے یہ عنوانات نئے فاتح روہت دیا۔ اس مقابلے میں پيروٹو ریسيو کے فرناڈو الاریج (21) اور میکسیکو کے النڈو ایسپارجا رمریج (26) بالترتیب اول اور دوم رنر اپ رہے۔ اس تقریب کی میزبانی پھليپينو سوپر اسٹار اور مس ورلڈ 2013 میگان ینگ، گلوکار اور مسٹر انگلینڈ اردن ولیمز اور كینڈا کے فریسي سینا نے کی۔

روہت کھنڈیلوال نے اس مقابلے کے دوران کئی ذیلی عنوانات جیسے مسٹر ورلڈ ملٹی میڈیا، مسٹر ورلڈ ٹالینٹ اور دیگر ٹائٹلو پر بھی اپنا قبضہ جمایا۔ روہت نےاس سے پہلے ماڈلنگ اور ٹی وی سیریلز میں اپنی قسمت آزمائی ہے۔

حیدرآباد میں ان کے والد راجکمار کھنڈیلوال نے یور اسٹوری کو بتایا کہ روہت کھنڈیلوال اگلے ہفتے یو کے سے حیدرآباد آئیں گے۔ انہوں نے اپنے بیٹے کی کامیابی پر خوشی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ یہ ان (روہت کی) محنتوں کا نتیجہ ہے۔