خواتین کی امیج کو بہتر کرنے کی کوشش میں 'لگژری امیج کنسلٹنسی'

0

آپ کی شبیہہہ (image )ہی آپ کی سب سےبہترین وزیٹنگ کارڈ ہے- یہ کہنا ہے نئی دہلی میں لگژری امیج کنسلٹنسی کے شعبہ میں فعال (active) انٹرنیشنل لگژری اکیڈمی کی ڈائریکٹر مونیکا گرگ کا-

دنیا بھر کے بہت سے معروف شبیہہ نگار یا امیج ماسٹرز سے تصویر، فیشن، اسٹائل، رنگ اور اخلاق میں تربیت یافتہ مونیکا نيويارك کے ایٹكيو ا ٹ اسکول آف مین ہٹن کی طرف سے تصدیق شدہ ایک ہدایت کارہیں- اس کے علاوہ انہوں نے سوئٹزرلینڈ کے انسٹی ٹیوٹ ولا پا ئر یفو سےبھی کئی سرٹیفکیٹ حاصل کئے ہیں اور اس کے سہارے وہ عورتوں کی شبیہ کو بہتر بنانے میں مہارت حاصل کرنے میں کامیاب رہی ہیں-

مونیکا کہتی ہیں، '' میرے پاس آنے والا ہر شخص اپنی ایک مختلف فکر اور پریشانی سے دوچار ہوتا ہے- ایک طرف جہاں کچھ لوگ اپنی شادی کے منڈپ میں سب سے زیادہ خوبصورت نظر آ نا چاہتے ہیں تودوسری طرف کچھ لوگ اپنے کیریئر کو نئی رفتار دینے کے لئے خود کی امیج کو بہتر بنانے کی خواہش رکھتے ہیں- اس کے علاوہ کچھ ایسے طالب علم بھی آتے ہیں جو موسم گرما کے دوران انٹرن شپ یا تربیت کے لئے غیر ملکی زمین پر اپنے پاؤں رکھنے سے پہلے اپنی امیج کو بہتر بنانا چاہتے ہیں- سب کی تشویش اوراغراض مختلف ہوتے ہیں اور اسی بنا پر حل بھی کئی طرح کے ہیں، لیکن اس کا اصل مقصد سامنے والے شخص کے اعتماد کی سطح میں اضافے سے متعلق ہے-

جہاں ایک طرف کچھ لوگوں کی مدد ان کی باڈی لینگویج یا پھرطور طریقہ میں تبدیلی لا کر ہی ہو جاتی ہے۔ وہیں دوسری طرف کچھ لوگوں کو فیشن اور اسٹائل میں تیار کرکے آگے بڑھانا پڑتا ہے- عام طور کسی بھی شخص کی مدد کے لئے آٹھ سے 10 سیشن کے درمیان کا وقت کافی ہوتا ہے- مونیکا کی اکیڈمی لوگوں کو باہمی سہولت اور ہم آہنگی کی بنیاد پر ایک ماہ یا پھر چند ماہ کے وقت میں تیار کر دیتی ہے-

کون ہیں مونیکا؟

مونیکا اصل میں سائنس کی طالبہ رہی ہیں- انہوں نے سال 2010 میں لڑکیوں کے لئے ایک اخلاقی تربیتی مرکز اور گرومنگ اسکول کھولا، جہاں پر وہ نئی دلہن کے لئے خصوصی تربیت کورس کو منظم کرتی تھیں- اس کے بعد سال 2012 میں انہوں نے ایک امیج کنسلٹنسی میں کام کرنا شروع کر دیا-

مونیکا اس کام کو کم سرمایہ کاری کے بدلے زیادہ فائدہ دینے والے کاروبار کے طور پر دیکھتی ہیں اور انہیں لگتا ہے کہ یہ شعبہ آنے والے دنوں میں ترقی کے لئے بالکل تیار ہے- مونیکا کے ذریعہ تربیت یافتہ کچھ طلباء کامیابی سے اپنا کورس مکمل کرنے کے بعد خود کاروبار میں قدم رکھ چکے ہیں اور کچھ تو اپنا امیج سٹوڈیو بھی کھول رہے ہیں-

مونیکا کو امیج کنسلٹنسی کے ذریعے خواتین کو بااختیار بنانے کی سمت میں کئے جا رہی کوششوں کے لئے دہلی کی سابق وزیر اعلی شیلا دکشت کی جانب سے سماج رتن ایوارڈ سے بھی نوازا جا چکا ہے- مونیکا کہتی ہیں، '' ہم خواتین کو معاشرے میں اپنا مقام حاصل کرنے کے لئے تعلیم یافتہ اور ان کی حوصلہ افزائی کر رہے ہیں- ایک بار ملک کے ایک معروف سیاست داں کی بہو نے اپنے اندر تبدیلی لانے کے لئے مجھ سے مدد کے لئے رابطہ قائم کیا کیونکہ انہیں لگتا تھا کہ وہ کئی اہم انصرام میں اپنے شوہر کے ساتھ قدم ملا کر چلنے کے حساب سے تیار نہیں ہیں- گرومنگ کے صرف ایک ہی سیشن کے بعد وہ خود اعتماد ی حاصل کر اپنے کو تبدیل کرنے میں کامیاب رہیں-

یہ بھی ایک اتفاق ہی ہے کہ مونیکا کی اکیڈمی ہندوستان میں بین الاقوامی شناخت کے ساتھ امیج کنسلٹنسی فراہم کرنے والی پہلی اکیڈمی ہے جو طلباء کو اس شعبہ میں بہترین اوربین الاقوامی معیار کے کورس پیش کر رہی ہے- فی الحال مونیکا اسٹائل امیج پرائیویٹ لمیٹڈ کے ایک حصے کے طور پر انٹرنیشنل لگژری اکیڈمی کا کامیاب آپریشن کر رہی ہیں جو کاروبار کے مختلف علاقوں میں سرگرم گنگا گروپ آف کمپنیز کا ایک کاروباری انٹرپرائز ہے-

مونیکا کی توسیع کے منصوبے

مونیکا خواتین کے لئے کچھ نئے کورس شروع کرنے پر غور کر رہی ہیں اور ساتھ ہی ان کا ارادہ اپنی اس مہم کی توسیع دیگر شہروں میں بھی کرنے کا ہے- مکمل طور پر بوٹ اسٹریپڈ ہونے کے باوجود مونیکا مستقبل قریب میں کسی بھی قسم کی سرمایہ کاری حاصل کرنے کا ارادہ نہیں ركھتي- یہ جلد ہی لدھیانہ میں اپنا ایک مرکز کھولنے جا رہی ہیں-

مونیکا اپنے کام سے انتہائی محبت کرتی ہیں اور وہ جو کچھ بھی کرتی ہیں اس کو لیکر کافی جذباتی رہتی ہیں- وہ خود کو اپنے طالب علموں کے درمیان رہنما کی طرح پیش کرنا کافی پسند کرتی ہیں- جیسا کہ مونیکا کہتی ہیں کہ ان کا کبھی کوئی رول ماڈل نہیں رہا لیکن انہوں نے ہمیشہ سے ہی کڑی محنت کو کامیابی کی اصل منتر مانا ہے- مونیکا کا خیال ہے کہ زندگی میں آگے بڑھنےے کے لئے یہی ایک واحد راستہ ہے-

ایک ہلکے پھلکے ماحول میں بات چیت کو ختم کرتے ہوئے مونیکا کہتی ہیں، " ہر گزرتے ہوئے وقت کے ساتھ خود کی بیداری میں اضافہ ہوتا جا رہا ہے اور حقیقت میں یہ ہمارے لئے ایک انتہائی اچھی خبر ہے"-

قلمکار۔ ۔ نشانت گویل

مترجم ۔ ۔ سہیل اختر