ہم خیال نوجوانوں کے ملنے کا ذریعہ ہے 'اے ورلڈ اےلائك'

0


ایک دہائی سے زیادہ بیرون ملک میں رہے ہمانشو گپتا نے نومبر 2014 میں اس نیٹ ورک قیام کیا ۔ بیرون ملک سے واپس آنے کے بعد نئے دوست بنانے میں آئی مشکل کو دیکھتے ہوئے  نیٹ ورک بنایا۔ فی الحال صرف دہلی / این سی آر میں کام  کر رہے ہیں لیکن مستقبل قریب میں ممبئی میں توسیع کا منصوبہ ہے ۔ ماہانہ ایک یا دو  پروگرام منظم کر ارکان کو صرف دعوت کی بنیاد پر کرتے ہیں  مدعو کرتے ہیں۔

وقت کے ساتھ جیسے جیسے مواصلات کے ذرائع ڈیجیٹل ہوتے جا رہے ہیں ہر کوئی الگ ہی دنیا میں خود کو سمیٹتے چلا جا رہا ہے۔ سماجی حلقے اور گروپ نسبتا چھوٹے ہونے کے علاوہ بیرونی دنیا کیلئے بند ہی ہوتے ہیں۔ لوگوں کے پاس آمنے سامنے بیٹھ کر ذاتی بات چیت کے لیے وقت ہی نہیں ہے، جس کی وجہ سے لوگوں آپس میں ملنے  کےلئے مدد کرنے والی کئی تنظیموں کو اپنے پاؤں جمانے کا موقع ملا ہے۔ خاص طور پر خود مختار اور انفرادی زندگی جی رہے نوجوانوں کو، جو اپنے ہم خیال  لوگوں کے ساتھ اپنے آپ کو شامل کرنے کے لئے اور ان سے ملنے کے لئے آن لاَئن دنیا کی طرف ٹکٹکی لگائے بیٹھے ہیں۔

تاہم آج کے وقت میں ایسے  تنہا افراد کو دوسروں سے ملوانے پر توجہ مرکوز کرنے والی کئی ویب سائٹس موجود ہیں۔ چاہے وہ ٹرولی میڈلي ایسل  ڈاٹكو جیسی ڈیٹینگ سائیٹ ہوں جوہم خیال نئے لوگوں کو آپس میں  ملانے کام رہی ہیں۔ حقیقت یہ ہے کہ اب ان ویب سائٹس کو مرکزی دھارے کی قبولیت مل رہی ہے۔ لیکن ایسے میں 'اے ورلڈ اےلائك' اوروں سے الگ ہونے کا دعوی کرتی ہے۔

 ہمانشو گپتا نے نومبر 2014 میں 'اے ورلڈ اےلائك' (اےڈبلواے) کو قائم کیا تھا۔ اس طرح لوگ ایک ساتھ آکر اپنے سوشل حلقوں کی تعمیر کرتے ہوئے اپنی اصلاح سے باہر آتے ہیں اور مختلف مقابلوں کے ذریعے ذاتی طور پر خود کو آگے بڑھاتے ہیں۔ یہ صرف ایک اعلی تعلیم یافتہ ہم خیال  افراد کے لیے کام کرنے والا ایک نیٹ ورک ہے جس میں صرف مدعو افراد  ہی شامل ہوسکتے ہیں۔

مغربی دنیا میں نئے لوگوں سے ملاقات کرنا نسبتا آسان کام ہے۔ چاہے آپ اسی شہر کے ہوں یا آپ کو کہیں باہر کے رہنے والے ہوں آن لائن اور اآف لائن ملاقاتیں وہاں کے ماحول میں ایک عام بات ہیں۔ جبکہ بھارت میں یہ خیال اب ابتدائی حالت میں ہی ہے اور ابھی صرف کچھ غیر رسمی دوروں اور تجارتی ٹورو تک ہی سمٹا ہوا  ہے۔ تاہم اگر عالمی صورت حال پر نظر ڈالیں تو ہم دوسری دنیا کے سامنے ابھی اس میدان میں ہم کافی دور ہیں۔ 

اےڈبلوے ماہانہ ایک ذاتی تقریب کا اہتمام کرتی ہے، جس میں اس کے اراکین کو اپنے جیسی سوچ اور ذہن رکھنے والے لوگوں سے ایک آرام دہ جگہ پر ملنے اور بات چیت کرنے کا موقع ملتا ہے۔ 'اے ورلڈ اےلائك' کی بنیاد دماغ میں صرف ایک ہی مقصد کے لیے رکھ االي گئی تھی۔ لوگوں کے نیٹ ورک کو توسیع کرنا اور افراد کو ایک ایسا پلیٹ فارم فراہم کروانا جہاں وہ اپنی جیسی سوچ اور ذہن رکھنے والے دیگر دلچسپ لوگوں سے مل سکیں جس کے اپنے ہی شہر میں ہونے کے بارے میں انہیں پتہ ہی نہیں تھا۔

اس کا رکن بننے کے لیے کوئی بھی شخص ان کی ویب سائٹ پر جا کر رکنیت کیلئے موجود فارم بھر سکتا ہے۔ ایک عام سی بحث کے بعد  اس شخص کو کسی ایک تقریب کے لیے مدعو کیا جاتا ہے۔ ایک بار رکنیت کیلئے رسمی دعوت نامہ موصول ہونے کے بعد آپ کو آپ کی رکنیت پلان منتخب کرتے ہوئے آن لائن فیس ادا کرنی پڑتی ہے۔ تین مہینے کے لئے ان کی فیس 7500 روپے، 6 ماہ کے لئے 12 ہزار روپے اور ایک سال کے لئے 15 ہزار روپے ہے۔

12 سال تک ہندوستان کے باہر اپنی زندگی گزارنے کے بعد ہمانشو نے 'اے ورلڈ اےلائك' کا قیام  کیا۔ بیرون ملک سے ہندوستان واپس آنے کے بعد ہمانشو کو احساس ہوا کہ نئے لوگوں سے ملنا اور دوست بنانا ایک انتہائی مشکل کام ہے۔ اسی پریشانی نے انہیں اےڈبلواے کے قیام کے لیے حوصلہ افزائی کی۔

کچھ ابتدائی مہینوں میں تو ٹیم نے اپنے ٹیکنالوجی پلیٹ فارم کو بہتر بنانے،  مواصلات کے علاوہ اپنے ساتھ شامل ہونے کے اہ افراد کا ان کے سماجی اور کاروباری نیٹ ورک کے ساتھ ایک ڈیٹا بیس تیار کیا۔ کام شروع کرنے کے بعد سے اب تک یہ ٹیم ایک درجن سے زیادہ پروگرام کی کامیابی میزبانی کر چکی ہے،  جن میں 150 سے زیادہ لوگ حصہ لے چکے ہیں۔ ہمانشو کہتے ہیں، '' ہمارے پاس اپنے نیٹ ورک میں شامل ہونے کے خواہش مند 100 سے بھی زیادہ نوجوانوں کا ڈیٹا بیس موجود ہے۔ فی الحال ہم ماہانہ صرف دو پراگرام کو کرنے پر توجہ دے رہے ہیں ۔آنے والے وقت میں ان کی تعداد میں اضافہ ہو سکتا ہے۔ ''

اب تک جس ایک چالنج کا سامنا ان کی ٹیم کو کرنا پڑا ہے وہ ہے ایک نئے نیٹ ورک کے تئیں لوگوں میں بھروسہ جگا نا۔ ہمانشو کہتے ہیں، '' وقت کے ساتھ ہم اس کے اراکین کی ضروریات، ترجیحات اور ان کی ذہنیت کو لے کر اور مزید بیدار ہو گئے ہیں۔ ہم نے اپنے ممبران کی رائے  بھی حاصل کرتے ہیں ، جس سے ہم اپنے ارکان اور دوستوں کے درمیان بہتر طریقے سے بات چیت کرنے کے قابل ہو پائیں گے۔ ''

آج کے وقت میں ایک طرف جہاں آن لائن دنیا  شادی  بیاہ کے لئے ہدف بنا کر کام کر رہی ہے وہیں دوسری طرف اےڈبلواے ہم خیال  لوگوں کو ملاقات کرنے اور تبادلہ خیال کرنے  کےلئے ایک پلیٹ فارم فراہم کرنے کی سمت میں گامزن ہے۔ ہمانشو کہتے ہیں، '' ہم خیال لوگوں سے ملنے کا انتظار ہمیں زندگی میں بہت سے دوسرے شعلبوں میں کافی فائدہ مند ثابت ہو سکتا ہے۔ چاہے آپ اپنے دوستوں کی دنیا بڑی کرنا چاہتے ہوں یا اپنے کام کی جگہ کے نیٹ ورک کو وسعت دینے کے خواہاں ہوں یا پھر اس کو کسی خاص شخص کی تلاش کی ہی بات ہو۔ ہمارا بنیادی ایجنڈا لوگوں کے سماجی حلقوں کی ترقی کرتے ہوئے انہیں ان کے کمفرٹ زون سے باہر نکالتے ہوئے  ان کی مدد کرنے کے علاوہ ان کے پسندیدہ طرز زندگی بنیاد پر نیٹ ورک بننے کا ہے۔ ''

اس ٹیم کا طویل مدتی ایجنڈا بھی ہم خیال لوگوں کو ملنے کے لیے ایک آزاد اور خاص پلیٹ فارم فراہم کرنے کا ہے۔

فی الحال اگلے چند مہینوں میں ہی ٹیم این سی آر  میں ہی اپنا دائرہ بڑھانے پر غور کر رہی ہے تاکہ یہ دہلی کے ارد گرد کے علاقوں میں اپنامقصد پورا کرتے ہوئے نیٹ ورک دستیاب کروانے والے اکلوتے نیٹ ورک کے طور پر قائم رہ سکے۔ اس کے علاوہ وہ اپنے ارکان کو ہم خیال نظریات  ارکان سے ملوانے کے لئے زیادہ بہتر ٹیکنالوجی فن تعمیر اور ایک موبائل ایپلی کیشن پر  بھی سرمایہ کاری  کر رہے ہیں۔ اس سال کے آخر تک ان کا ارادہ ممبئی میں اپنے کام کی توسیع کرنے کا ہے۔ اس کے علاوہ سال 2016 تک وہ دنیا کے مختلف ممالک تک اپنی رسائی میں اضافہ کرنا چاہتے ہیں۔

آخر میں ہمانشو کہتے ہیں، '' ہم آنے والے وقت میں اعلی تعلیم یافتہ  نوجوانوں کےلئے ایک بین الاقوامی عالمی نیٹ ورک قائم کرنا چاہتے ہیں جس کا پھیلاؤ دنیا کے کچھ منتخب شہروں میں ہو اور لوگ اپنے مقام، کام یا ذاتی دوروں کو پیچھے چھوڑ کر اس کے رکن بنیں۔ ''

Related Stories