گھر بیٹھے بینکنگ کی ضروریات کو پورا کرے 'Dial-a-Bank'

ہندوستان کی پہلی فنانشیل ہیلپ لائین، جس کی شرعات 2011 میں ہوئی تھی۔

0

مشترکہ فنڈ کیا ہیں؟ مشترکہ فنڈ میں سرمایہ کاری پرخطر ہوتا ہے اور سرمایہ کاری کرنے سے پہلے اسکیم کے دستاویزات کو احتیاط سے پڑھنا چاہیے۔ یہ انتباہ ہم اکثر کسی بھی مشترکہ فنڈ میں سرمایہ کاری کرنے سے پہلے جانتے ہیں، لیکن اس کا اصلی مطلب کیا ہوتا ہے اس سے کافی لوگ نا واقف رہتے  ہیں۔ بہت کم ایسے کاروباری ہوں گے جن کے پاس لائف انشورنس، ہیلتھ انشورنس یا مالی تحفظ سے منسلک ایسی کوئی پروڈکٹک  ہونگی جو ان کے مشکل وقت میں مدد کر سکے۔ اس کی پہلی وجہ یہ ہے کہ ان کے پاس اتنا وقت نہیں ہوتا کہ وہ مختلف پالیسیوں کے بارے میں ریسرچ کر اپنی ضرورت کے مطابق اس کا انتخاب سکیں۔ دوسرا یہ کہ جب کوئی ان پالیسیاں لینے کے لئے بینک سے رابطہ کرتا ہے تو بینک کا دعوی ہوتا ہے کہ وہ آپ کو بہترین پالیسی بیچ رہا ہے۔ ان وجوہات کے علاوہ زیادہ تر سرمایہ کار اپنے پیسے کو انشورنس پالیسی خریدنے یا پریمیم کو ادا کرنے سے بہتر اپنے اسٹارٹپ میں سرمایہ کاری کرنا زیادہ بہتر سمجھتے ہیں۔

گوروکھرانہ، بانی، 'Dial-a-Bank'
گوروکھرانہ، بانی، 'Dial-a-Bank'


کاروباریوں کو کئی بار یہ سمجھانا مشکل ہوتا ہے کہ وہ آپ کے پیسے کو اپنے اسٹارٹپ کے علاوہ کہیں اور سرمایہ کاری کریں۔ 'Dial-a-Bank' ایسےہی مسائلہ کو دور کرتا ہے اور آپ کی ضروریات کے مطابق صحیح رائے دیتا ہے۔ 'Dial-a-Bank' کا دعوی ہے کہ وہ ملک کی پہلی مالی ہیلپ  لائن ہے جہاں پر لوگ مالیاتی پروڈکٹ کو پسند کر سکتے ہیں، پھر چاہے وہ باہمی فنڈ ہوں، کہیں سے قرض لینا ہو یا کسی طرح کی کوئی پالیسی ہو۔ 'Dial-a-Bank' کا 90 بینکوں، 40 مشترکہ فنڈ اور 20 انشورنس کمپنیوں سے قرار ہے۔ 'Dial-a-Bank' کی خدمات لینے کے لئے کوئی بھی ان سے 60011600 پر رابطہ کر سکتا ہے۔ فی الحال ان کی موجدوگي  تقریباً دو درجن  شہروں میں ہے۔ جہاں سے کوئی بھی سرمایہ کاری سے منسلک منصفانہ مشورہ لے سکتے ہیں۔ پھر چاہے کسی کو لون لینا ہو یا اس کی سرمایہ کاری کی منصوبہ ہو۔

گورو کھرانہ جنہوں نے اس سے پہلے سٹی بینک، ING بینک اور کئی دوسری ایم این سي کمپنیوں میں بڑا کردار ادا کیا تھا۔ جس کے بعد انہوں نے سال 2011 میں 'Dial-a-Bank' کا آغاز کیا۔ جب انہوں نے دیکھا کہ بینك  کے کئ یپروڈکٹ تیسری پارٹی فروخت کر رہی ہے جو اس قابل نہیں  ہوتے ہیں  اور نہ ہی ان کو ان پروڈکٹ کے بارے میں مکمل معلومات ہے۔ گورو نے اپنے کیریئر کا آغاز 'Xerox' سے کیا تھا۔ جہاں پر انہوں نے ملک بھر میں نیٹ ورک کی ترقی میں اہم کردار ادا کیا تھا۔ اس کے بعد انہوں نے سٹی بینک میں ملازمت کی۔ گورونے چندی گڑھ میں بینک کو اپنی پہلی شاخ کھولنے میں مدد کی۔30 سال کی عمر میں ہی سٹی بینک میں وی پی کی پوسٹ  حاصل کی ۔ اس کے بعد سال 2008 میں انہوں نے آئی این جی بینک میں نوکری کی۔

گورو  کا کہنا ہے کہ جب انہوں نے اپنے انٹرپرائز کی شروعات کی تھی تو ان کے راستے میں  کئی  روكاوٹیں پیش آئیں۔ خاص طور سے بینک کی پروڈکٹ کے لئے وائس  کی بینا پر  کاروبار  کرنا ایک پیچیدہ کام تھا۔ اس کے مختلف اجزاء کو ایک ساتھ شامل کرنے کے لئے کافی وقت  درکار تھا۔ اس کے علاوہ مختلف شہروں میں فون کے لئے ایک پلیٹ فارم بھی تیار کرنا تھا۔ ساتھ ہی اس وقت بڑے بینکوں کے ساتھ شراکت داری بھی ہو رہی تھی۔ گورو کا کہنا ہے کہ کسی بھی کاروباری کے لئے یہ سب سے اچھی بات ہوتی ہے کہ اس کی ذہنی رکاوٹیں اسی دن ٹوٹ جاتی ہیں جس دن وہ اپنے شاندار کام کو چھوڑ دیتا ہے۔ اس کے بعد سر جھکا کر نئے سرے سے اپنے کاروبار کو کھڑا کرنا ہوتا ہے۔ یہ زندگی میں ایک طرح سے لیگو کھیل کی طرح ہوتا ہے۔

'Dial-a-Bank' کی ٹیم
'Dial-a-Bank' کی ٹیم


خاص بات یہ ہے کہ اس شعبے میں بہت سے دوسرے کھلاڑی بھی موجود ہیں جیسے BankBazaar.com، PolicyBazaar.com، ApnaPaisa.com اور InsurancePandit.com۔ لیکن ان میں سے کوئی بھی مالیاتی پروڈکٹ کی وائس  کی بنا پر  معلومات نہیں دیتا ہے۔ ایسے میں گاہک کو کسی بھی پروڈکٹ کو سمجھنے، اس سے جڑے شکوک و شبہات کو دور کرنے اور سوالات کے جواب ملنے میں آسانی ہوتی ہے۔ جبکہ دوسرے کئی پورٹل چیاٹ باکس کی سہولیات دیتے ہیں باوجود لوگ وائس  پر منحصر  خصوصیات پر زیادہ انحصار کرتے ہیں۔ گوروکا کہنا ہے کہ مقابلہ کی وجہ سے کام میں تیزی آتی ہے، کاروباری اداروں میں اعلی چھلانگ لگائی جا سکتی ہے، سخت محنت اور مضبوط انسان بننا پڑتا ہے۔ اس شعبے میں کئی بڑے اور پرانے کھلاڑی موجود ہیں۔ ان میں سے بہت سے ایسے ہیں جنہوں نے سرمایہ کاری حاصل کی ہے اور ان کو واپس کرنا کافی مشکل کام ہے۔

ذاتی طور پر  گورو کا خیال ہے کہ یہ مارکیٹ کافی بڑا ہے اور اس میں کئی کھلاڑیوں کے لئے اچھے مواقع ہیں۔ 'Dial-a-Bank' گزشتہ تین  سالوں کے دوران ت دو لاکھ سے ذاید لوگوں تک اپنی خدمات پہنچا چکا ہے۔ ویبسانٹ پر ہر روز کئی سو لوگ ہٹ کرتے ہیں ان میں سےبڑی تعداد میں لوگ معلومات حاصل کرنے کے لئے فارم بھرتے ہیں ۔ گورو کا کہنا ہے کہ کبھی بھی وہ چیز فروخت کرنے کی کوشش مت کرو جو آپ کے پاس ہے بلکہ وہ  فروخت کریں  جو کسٹمر کی ضرورت ہے۔

Related Stories