دہلی کی میٹرو ٹرین چلے گی مدھیہ پردیش کی قدرتی توانائی سے

0

سب سے زیادہ آلودہ شہروں کی فہرست میں آنے والے شہر دہلی لائف لائن 'میٹرو ریل' میں اگلے سال سے مدھیہ پردیش کی قدرتی بجلی کا استعمال ہوگا۔

مدھیہ پردیش کی جدید اور قابل تجدید توانائی کے محکمہ کے پرنسپل سکریٹری منو شریواستو کے مطابق، "دہلی میٹرو ریل کارپوریشن: ڈی ایم آر سی: اور مدھیہ پردیش کے ریوا ضلع میں دنیا کا سب سے زیادہ 750 میگاواٹ پیداواری صلاحیت کا شمسی توانائی پلانٹ لگانے والی کمپنی کے درمیان بجلی کی خریداری کا معاہدہ ہونے والا ہے۔"

منو شریواستو نے کہا کہ گزشتہ ماہ شمسی توانائی پلانٹ لگانے کے ٹینڈر جاری کئے تھے، اس میں شامل ہونے والے ٹینڈر داخل کرنے والوں کا اجلاس یکم اپریل کو دہلی میں ہو چکا ہے۔ اس اجلاس میں ڈی ایم آر سی کے آپریٹر: بجلی کی: اے گپتا بھی شامل ہوئے تھے. دہلی میٹرو کو قدرتی بجلی سے چلانے کی بات ایسے وقت سامنے آئی ہے جب دہلی حکومت کو قومی دارالحکومت میں آلودگی کم کرنے کیلئے سخت اقدامات اٹھانے پڑ رہے ہیں۔

شریواستو نے کہا کہ مدھیہ پردیش ڈی ایم آر سی کو یقینی طور پر قدرتی بجلی فراہم کرے گا اور اس سلسلے میں کاغذی کارروائی تقریبا آخری مرحلے میں ہے۔ انہوں نے کہا کہ ریوا میں شمسی توانائی پلانٹ کی تنصیب کا کام جون 2017 تک مکمل ہو جائے گا۔

منو شریواستو، جو کہ مدھیہ پردیش توانائی ڈیولپمنٹ کارپوریشن: ایم پی يووی این کے مینجینگ آرگنائزر بھی ہیں، نے کہا کہ ہندوستانی شمسی توانائی کارپوریشن لمیٹڈ اور ایم پی يووی این کے مشترکہ ادارے ریوا الٹرا میگا سولر پروجكٹ کے تحت ریوا ضلع کے گڈھ تحصیل بندھوار علاقے میں 1500 ہیکٹر زمین پر یہ قدرتی شمسی توانائی کا پلانٹ لگایا جا رہا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ عالمی بینک اس پلانٹ کے لئے 250 کروڑ روپے دے رہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ ایک میگاواٹ شمسی توانائی کی تنصیب کے لیے چھ کروڑ روپے کا خرچ آتا ہے۔ فی الحال دنیا کا سب سے زیادہ 392 میگاواٹ شمسی توانائی پیداواری صلاحیت والا پلانٹ امریکہ میں کیلی فورنیا ریاست کے Mojave صحرا میں قائم ہے۔ ایشياء میں سب سے بڑے شمسی توانائی پلانٹ کا افتتاح فروری 2014 میں نریندر مودی نے کیا تھا جو اس وقت وزیر اعظم کے عہدے کے لیے بی جے پی کے امیدوار تھے۔