'بہترعملی نظام کے بغیر کمپنی کو سیریز اے، بی، سی میں لانا نا ممکن'

0

''ہمیں ان لوگوں پر پورا بھروسہ ہے جو ہماری کمپنی میں کام کرتے ہیں''...ایسا کہنے والے مالکین کی تعداد کم نہیں ہے، لیکن کیا واقعی وہ دل سے ایسا کہنا چاہتے ہیں؟ شائد نہیں۔

اس کے باجوود یہ حقیقت اپنی جگہ اٹل ہے کہ جس دن ہم اپنے لوگوں پر بھروسہ کرنے لگیں گے، ہماری کمپنی کی حالت بہتر ہونے لگے گی۔ وجہ صاف ہے ملازمین کمپنی کو اپنا سمجھنے لگیں گے۔ واقعی یہی کسی بھی کمپنی کی ترقی کا سب سے بڑا راز ہے۔ کامیابی کے اس 'منتر' کا اشتراک انموبی کے بانی اور کمپنی کے سی ای او نوین تیواری نے۔

ٹیكسپارک 6 میں کمپنیوں میں بہترعملی تہذیب کو فروغ دیکر دنیا بھر میں کامیابی کے پرچم لہرانے والے نوین تیواری نے بتایا کہ جب انموبی چھوٹی کمپنی تھی تو انہوں نے کئی غلطیاں کیں۔ بقول نوین، "اصل میں ہوتا یہ ہے کہ کمپنی میں کام کرنے والا ہر شخص آزاد رہ کر زندگی جینا چاہتا ہے۔ وہ سوچتا ہے کہ ہم اسکول میں نہیں ہیں۔ ہم بالغ لوگوں کے ساتھ کام کر رہے ہیں۔ اگر ہم بامعنی کام کرنا چاہتے ہیں تو ہمیں اپنے لوگوں سے بھی قابل قدر کام کروانا ہوگا۔ اس کا خیال رکھنا ہوگا کہ ہم اپنے لوگوں کا وسائل کے طور پر استعمال نہیں کر یں گے۔ "

نوین تیواری نے مانا کہ جیسے ہی انہیں یہ باتیں سمجھ میں آئیں، انہیں لگا کہ واقعی ایسی چھوٹی چھوٹی باتوں پر توجہ دینا وقت اور محنت دونوں کو ضائع کرنا ہے۔

آزاد ورک کلچر کا بیجا استعمال کم ہوتا ہے۔ جیسے ہی انہوں نے اپنی کمپنی کا ورک کلچر بدلہ اس کا فائدے ان کے سامنے تھے۔ سب سے بڑی بات یہ نظر آئی کہ لوگ آزاد ورک کلچر کا بیجا استعمال نہیں کرتے۔ جبکہ اس سے پہلے لوگوں پر تمام طرح کی پابندیاں تھیں، لیکن لوگوں کا رویہ اس سے بالکل الگ تھا۔ نوین نے مانا کہ اب صرف ایک فیصد لوگ ایسے تھے جو کمپنی میں آزاد ورک کلچر کا غلط استعمال کر رہے تھے جو کہ پہلے کی توقع بہت کم تھا۔ ان حالات میں لوگ اپنی ذمہ داری سمجھنے لگتے ہیں۔ اور ایک کمپنی کے لئے اس سے اچھا اور کیا ہو سکتا ہے- کمپنی کے فائدہ بھی اور کمپنی میں ماحول بھی اچھا۔

نوین تیواری نے بتایا کہ کمپنی میں اگر اچھا ورک کلچر ہوگا تو کام کرنے والے کام نہیں چھوڑیں گے۔ سب کچھ اعتماد سے منسلک ہے۔ اگر کمپنی اپنے ملازمین پر بھروسہ نہیں کریں گی تو اس کی ترقی کبھی نہیں ہو سکتی۔ ایسے میں ضروری یہ ہے کہ پہلے تو ملازمین میں کمپنی کے تئیں اعتماد پیدا کیا جائے۔ دوسرے نئے ملازمین کی بھرتی اندرونی بھرتی نظام کا فروغ دیا جائے۔

اس کا سب سے بڑا فائدہ یہ ہوگا کہ جب آپ کی کمپنی میں لوگ ایک عہدے سے دوسرے عہدے پر جاتے ہیں تو وہ دوسری چیزیں بھی سیکھتے ہیں اور دوسرا یہ کہ ان کے اندر کمپنی کے تئں اعتماد اور اٹوٹ ہوتا ہے۔

کہتے ہیں ہر بڑی چیز کا آغاز ایک چھوٹے قدم سے ہی ہوتا ہے۔ اگر فیصلے نہیں لئے جائیں گے تو کس طرح پتہ چلے گا کہ اس کا فائدہ کتنا ہے اور نقصان کتنا۔

نوین کا خیال ہے کہ جب آپ ایک کمپنی بناتے ہیں تو اسی وقت سوچنا ہوگا کہ اس کا دائرہ کتنا بڑا یا چھوٹا ہو جائے گا۔ کیا آپ نے کم لوگوں کو ذہن میں رکھ کر اپنا کام شروع کیا ہے؟ یا پھر آپ کی نظر میں مکمل ملک ہے یا اس سے بھی بڑھ کر دنیا۔ اگر بڑا کام کرنا ہے تو یاد رکھنا ہوگا کہ اس کے لئے عملی نظام بہتر بنائیں گے، اسی وقت آپکا یہ خواب شرمندہ تعبیر ہوگا۔ اس لئے جب آپ کی کمپنی چھوٹی ہے اسی وقت سے ورک کلچر پر خاص توجہ دینے کی ضرورت ہے۔ "

سو بات کی ایک بات، کمپنی کو اگر بہتر بنانا ہے تو کمپنی کے بانی کو بہتر ورک کلچر بنانے کے لئے وقت دینا ہوگا۔ صرف سرمایہ کاروں کو پکڑنا کافی نہیں ہے، بلکہ اس کے ساتھ ہی ضروری ہے کمپنی میں بھرپور وقت دینا۔ "اگر کمپنی کو سیریز اے، بی، سی سے اوپر بنانا ہے تو یاد رکھیں کہ اس کے لئے کمپنی میں کام کے لئے بہتر نظام العمل بنانا ہی ہوگا۔ اس کے لئے ہیومن ریسورس آوٹ سورس نہ کریں۔ خود سمجھیں اور لوگوں کو اپنی سمجھ کا حصہ بنائیں۔ "

پچھلی صدی کے آخری دہے میں کہانیاں لکھنے کے مقصدسے صحافت میں قدم رکھا تھا۔ وہ کہانیاں جو چہروں پر پہلے اور کتابوں میں بعد میں آتی ہیں۔ اس سفر میں ان گنت چہروں سے رو بہ رو ہوا، جتنے چہرے اتنی کہانیاں، سلسلہ جاری ہے۔ पिछली सदी के आखरी दशक में कहानियाँ लिखने के उद्देश्य से पत्रकारिता में क़दम रखा था। वो कहानियाँ, जो चेहरों पर पहले और किताबों में बाद में आती हैं। इस सफर में अनगिनत चेहरों से रू ब रू हुआ, जितने चेहरे उतनी कहानियाँ, सिलसिला जारी है।

Related Stories

Stories by F M Saleem