'اسمارٹپ انڈیا' دو بچوں نے بنایا 'اسٹارٹپ' وینچر

0

15 اگست 2015کو PM مودی کی تقریر نے دو بھائیوں کو متاثر کیا اور انہیں مودی کے اسٹارٹ اپ مشن سے واقف ہوئے –

ان کے والد انجینئر ہیں- اس کا مطلب سمجھنے کے بعد انہوں نے شروع کیا india home made toy وینچر

www.indiahomemade toys.com اس ویب سائٹ پر دونوں بھائیوں کے تیار کردہ کھلونے خریدے جاسکتے ہیں –

کیا آپ نے کسی ایسی کمپنی کا نام سنا ہے جہاں کے سی ۔ای۔او اور سی ۔ ٹی۔ او کی عمریں12 10، سال ہیں؟ حیران ہوگئے نا آپ بھی؟ یہ دونوں بھائی PMمودی کے تیار کردہ منصوبے کا حصہ 16 جنوری کو بنے - خاص دعوت نامہ انہیں دلی جانے کےلیے دیا گیا - ان دونوں کے ذریعے بھیجے گئے ویڈیوز کُل 235 ویڈیوز میں سے منتخب کئے گئے تھے –

  • https://youtu.be/gY_d5lLP8n0

یہ کہانی کیرل کے شہر کولم سے شروع ہوتی ہے- جہاں یہ دو انمول رتن ، نہایت منفرد شخصیت کے مالک دو بھائی ابھی جیت پریم جی اور امر جیت پریم جی نے صرف 10 اور12 سال کی عمر میں اپنا اسٹارٹپ شروع کیا -جو عمر بچے کھیل کود میں گزارتے ہیں اس عمر میں ان ہونہاروں نے اسٹارٹپ کی شروعات کردی- بھارتی بچوں کےلیے ان کا اسمارٹپ کا بھی منصوبہ ہے- ان دونوں کی اس کامیابی کے پیچھے ان کے والدین کا ہاتھ ہے- ان کی والدہ پرنتھا پرم جیت کالج میں پروفیسر ہیں- والد میکنیکل انجینئر ہیں۔

دونوں بھائیوں نے 15 اگست 2015کی وزیرِاعظم مودی کی تقریر سنی جو لال قلعہ میں دی گئی تھی - تقریر طویل تھی ۔دونوں بچے کھیل رہے تھے - جیسے ہی PM نے اسٹارٹپ انڈیا اور اسٹینڈپ کی بات کی تو دونوں بھائیوں نے اپنے والد پریم جیت پر بھاکر سے پوچھا کہ یہ کیا ہے- انہوں نےاسٹارٹپ کا مطلب پوچھا -----------تو ان کے والد نے دونوں کو اسٹارٹپ کا مطلب سمجھایا کی اسٹارٹپ یعنی ایسا کوئی آئیڈیا جسے اپنا کرآپ لوگ بزنس وینچر میں تبدیل کرسکیں اور سرمایہ لگا کر روپیہ کماسکیں۔اسی وقت دونوں بھائیوں نے اپنا اسٹارٹ اپ کا آئیڈیا سوچ لیا ۔


والد سے کھلونے کے تعلق سے بات کی ۔والدہ نے پوچھا کونسے کھلونے فروخت کروگے-، چائینیز ؟ تو انہوں نے کہا ،"نہیں جو کھلونے ہم بنائیں گے وہی فروخت کریں گے – "یہیں سے (IHT) یعنی انڈین ہوم میڈ ٹوائیز۔کام کی شروعات کی گئی ۔

اسکل انڈیا کے تحت 2022 تک مودی کا خواب 400 میلین نوجوان کو تیار کرنا ہے- ان میں سے 200 میلین اسکولی بچے ہوں گے- کھلونوں سے جہاں ایک طرف سبھی بچے جڑے ہوئے ہیں وہیں اس کے ذریعے انڈیا ہوم میڈ ٹوائیز اسکیل انڈیا ، ڈریم انڈیا ، ڈیجیٹل انڈیا ،گلوبل انڈیا سبھی کو ایک چھت کے نیچے لاکر اسمارٹپ انڈیا کی ایک مضبوط بنیاد رکھی جاسکتی ہے - ایک سروے کے مطابق ہم کھلونے برآمد کرنے کےلیے تقریبا 2میلین ڈالر رقم بیرون ملک خرچ کرتے ہیں - اس میں چین کا حصہ سب سے بڑا ہے- کچھ کھلونے بچوں کی صحت پر بھی اثر انداز ہوتے ہیں ۔

ان ہونہار بچوں کے والد کو بھارت سرکار نے ڈیجیٹل انڈیا میں ان کے اہم تعاون کےلیے بھارت سرکار سرٹیفیکیٹ دیاہے - ان کے مطابق انڈیا ہوم میڈ ہی سب سے مضبوط سہارا ہے- پریم جی پربھاکر چاہتے ہیں کہ ہر بچے میں کچھ نہ کچھ تخلیقی صلاحیت موجود ہوتی ہے- پربھاکر کا کہنا ہے "آج کے یہ TOY Makers کل کے ٹیکنالوجیکل انجینئر ہیں-" کمپنی کےCEO ابھی جیت پریم جی کے مطابق IHT انڈیا ہوم میڈ TOY صرف آن لائن اسٹور نہیں ہےبلکہ بچوں کی تخلیقیت کا مرکز ہے- جہاں بچے اپنی سوچ کو عملی شکل دےسکتے ہیں ۔

امر جیت پریم جی کے مطابق جو اس کمپنی کے CTO ہیں کہتے ہیں "ہمارا مشن بھارتی بچوں کو تکنیکی لحاظ سے ایکسپرٹ بنانے کےلیے تحریک دینا ہے- بھارت میں ہر سال کھلونے کےلیے جو ہزاروں کروڑ کا سرمایہ خرچ ہوکر بیرون ملک جاتا ہےاسے بھی ہم بچاسکتے ہیں - IHT کے مطابق کھلونے بنانے میں استعمال ہونے والے اجزاء جیسے الیکٹرانک اسکیرٹ و پلاسٹک ویلر گئیر باکس ،کنیکٹرس ، چیپ سولار پینل دیگر بہت ساری اشیاء جن کا کاروبار کیا جاسکتا ہے۔

IHT ایسے کھلونے بنانا چاہتے ہیں جنہیں بچے بلا جھجک استعمال کرسکیں۔ ساتھ ساتھ ایکو فرینڈلی کھلونے تیار کرنا چاہتے ہیں - اس لیے IHT کو کم ازکم 1000 اسٹارٹپ بنانے کی ضرورت ہے- PMمودی کے خواب کے مطابق منصوبہ روبہ عمل ہوسکے - امر جیت کے مطابق تعلیمی ادارے اگر مل جائیں تو اس کام کو رہبری حاصل ہونے کے ساتھ ساتھ نئے طریقہ تعلیم میں اسے شامل کیا جاسکتا ہے -اس سے جڑا نصاب بھی کافی کارآمد ثابت ہوسکتا ہے- ایک اضافی نصاب کے طور پر اس کی مدد سے جماعت نہم دہم کے طلباء آگے چل کر ترقی بھی کرسکتے ہیں ۔

روبوٹ تیار کرنا وغیرہ مودی جی کے بھارت کو ایک ترقی یافتہ بھارت بنانے کا منصوبہ کرنے والے ابھی جیت اور امر جیت کا منصوبہ ہوم میڈ ٹواے سے ہونے والے فوائد بہت ہیں جیسے غریب بچوں کو پڑھائی کے لئے روپیہ مہیا کرنا وغیرہ - ملک کی ترقی میں یہی مددگار ثابت ہوگا یہ دونوں بھائی اپنے والدین کے بھی شکر گزار ہیں جنہوں نے انہیں تعاون ، تحریک دی - اسٹارٹپ انڈیا میں دعوت نامہ دینے والے سکریٹری امیتابھ کانت کےلیے خصوصی شکریہ ادا کرتے ہوئے کہتے ہیں کہ مودی سے ملنا ان کا سب سے بڑا خواب ہے- یہ دونوں بھائی مودی جی سے مل کر اسمارٹپ انڈیا کی منصوبہ بندی پر تفصیلی بات چیت کرنا چاہتے ہیں ۔

تحریر: نیرج سنگھ

مترجم: ہاجرہ نور احمد زریابؔ