نئے اسٹارٹپس کاروباریوں کو کامیابی کے گُر سکھائے گا اسپارک 10

0

مفت میں ہوگی13 مہینے کی ٹرینینگ

20 لاکھ کی سرمایو کاری کے لئے ملیگا تعاون

10 اسٹارٹپ کا کیا جائےگا انتخاب

حیدرآباد کے گچی باولی میں ہوگی ٹرینینگ


اپنے نئے سٹارٹپ کے ذریعے صنعت کے میدان میں قدم رکھنے والے تاجروں کو تجارتی حمایت اور سرمایہ کاری میں تعاون کرنے کے مقصد سے اسپارک 10 پروگرام آئندہ فروری 2016 سے حیدرآباد میں منعقد ہوگا۔

یورپی سٹارٹپ ایكسلریٹر اسپارک 10 نامی یہ پروگرام ہندوستان میں اپنی نوعیت کا پہلا پروگرام ہوگا۔ اس کی جانب سے 10 منتخب اسٹارٹپس کو 13 ہفتے کی تربیت دی جائےگی اس کے ساتھ ساتھ 20 لاکھ روپے کی سرمایہ کاری بھی دستیاب کروائی جائے گی۔

اسپارک 10 کے شریک بانی اٹل مالویہ نے بتایا کہ مغربی ممالک کے کامیاب اسٹارٹپ تاجروں کے تجربات کو حیدرآباد اور ہندوستان کے نوجوان تاجر و صنعتکاروں کے سامنے رکھنے کا انتظام کمپنی نے کیا ہے۔ اس سے نہ صرف سرمایہ کاری کی امکانات روشن ہوں گے، بلکہ نیٹ ورک بنانے اورامکنہ نتیجہ خیزی کے نظام کو بھی بہتر بنایا جا سکے گا۔ انہوں نے امکان ظاہر کیا کہ اس پروگرام میں حصہ لینے کے خواہش مند لوگوں کی تعداد کافی زیادہ ہے، لیکن صرف 10 کمپنیوں کو منتخب کیا جائے گا۔ انتخاب میں اس بات پر خصوصی توجہ دی جائے گی کہ ان کی وابستگی اور کمپنی کی مصنوعات کی امکانات کتنی غالب ہیں۔

مالویہ نے کہا کہ یورپ کے مشہورماہر اسٹاٹرپس جان بریڈفورڈ ان کے اہم مشیر ہیں۔ عالمی اقتصادی فورم سے بھی بہت سے لوگ اس پروگرام سے جڑیںگے۔ تربیتی پروگرام حیدرآباد کے ایسکی (ESCI) گچی باولی میں ہوگا۔ درخواست دائر کرنے کا عمل 1 فروری کو شروع ہوگا اور مارچ کے دوسرے ہفتے میں پروگرام کا آغازہو گا۔

ایک سوال کے جواب میں مالویہ نے بتایا کہ ہر سال حیدرآباد میں 800 ابتدائی کاروباری اسٹارٹپ شروع ہوتے ہیں جبکہ ان کی کامیابی کا فیصد بہت کم ہوتا ہے۔ ان کا پروگرام جہاں کامیابی کے گُر سکھائے گا، وہیں ناکامی سے بچنے کے طور طریقوں سے بھی متعارف کروائے گا۔ اس کے لئے اسٹارٹپ کاروباری کوکسی قسم کا خرچ نہیں کیا جائے گا، بلکہ سرمایہ کاری میں ایکوئٹی کی بنیاد پر کمپنی کی شرکت ہوگی۔ سٹارٹپ میں ناکامی کی وجوہات کا ذکر کرتے ہوئے انهوں نے کہا کہ سپورٹ سسٹم کے کمزور ہونے اور لگن کی کمی کی وجہ زیادہ تر انٹرپرائز بند ہو جاتے ہیں۔

جب اسپارک ٹین کے حیدرآباد میں لانچ کا اعلان کیا گیا تو موقع پر اسپارک 10 کے بانی رکن وجئے کیتن مترا، ایل این پرمی، سبّا راجو پرچرلا، راجیش گمڈپو اور ڈاکٹر سریش كامارڈی بھی موجود تھے۔

پچھلی صدی کے آخری دہے میں کہانیاں لکھنے کے مقصدسے صحافت میں قدم رکھا تھا۔ وہ کہانیاں جو چہروں پر پہلے اور کتابوں میں بعد میں آتی ہیں۔ اس سفر میں ان گنت چہروں سے رو بہ رو ہوا، جتنے چہرے اتنی کہانیاں، سلسلہ جاری ہے۔ पिछली सदी के आखरी दशक में कहानियाँ लिखने के उद्देश्य से पत्रकारिता में क़दम रखा था। वो कहानियाँ, जो चेहरों पर पहले और किताबों में बाद में आती हैं। इस सफर में अनगिनत चेहरों से रू ब रू हुआ, जितने चेहरे उतनी कहानियाँ, सिलसिला जारी है।

Related Stories

Stories by F M Saleem